دلچسپ و خاص

پیر غائب، بلوچستان کا پُرفضا سیاحتی مقام

Web Desk

پیر غائب، بلوچستان کا پُرفضا سیاحتی مقام

پیر غائب، بلوچستان کا پُرفضا سیاحتی مقام

کوئٹہ سے تقریباً 90 کلومیٹر کے فاصلے پر پہاڑی سلسلے میں واقع وادئ بولان میں ایک پُرفضا سیّاحتی مقام ’’پیرغائب‘‘ کے نام سے مشہور ہے۔

 یہاں کی زمین کھجور کے درختوں سمیت مختلف درختوں، جڑی بوٹیوں سے آباد ہے۔ نیز جا بجا چھوٹی بڑی آب شاروں سے مزیّن چشمے ہیں، جن کا پانی گرمیوں میں ٹھنڈا اور سردیوں میں گرم رہتا ہے۔ یہاں کے پُرفضا ماحول میں انسان قدرت کی رعنائیوں میں کھو کر رہ جاتا ہے۔

دل کشی میں اپنی مثال آپ،چھوٹی بڑی آب شاروں اورکھجور کے باغوں سے مزیّن یہ علاقہ سیّاحوں کے لیے بڑی کشش رکھتا ہے۔ یہاں آنے کے لیےکوئٹہ سبّی روڈ سے جیپ لینا پڑتی ہے۔

 پیر غائب کے مقام پر پانی کا ایک قدرتی چشمہ برسوں سے جاری ہے، جس کے بارے میں روایت ہے کہ کسی زمانے میں پانی کی قلّت کے باعث یہاں کے باشندے ہجرت پر مجبور ہوگئے، تو اسی دوران ایک نیک بزرگ تشریف لائے۔

مقامی باشندوں نے اُن سے پانی کی قلّت کا ذکر کیا، تو بزرگ نے اللہ تعالیٰ سے دُعا مانگی اور پہاڑ سے پانی کا چشمہ پُھوٹ پڑا، جو آج تک رواں دواں ہے۔ بزرگ کا مزار بھی اس چشمے کے قریب ہی موجود ہے۔

 زائرین اور سیّاحوں کے ہجوم کے پیشِ نظر پیر غائب کے مقام پرفرنٹئیر کور (ایف سی) نے حکومت ِبلوچستان اور سدرن کمانڈ کے تعاون سے پختہ سڑکیں، مسجد، پارک اور ایک فُوڈ پوائنٹ بھی قائم کیا ہے۔

تازہ ترین