پاکستان

خیبرپختونخوا، اسپتالوں میں خواجہ سراؤں کا وارڈ مختص کرنے کا فیصلہ

وزیراعلیٰ نے علیحدہ قبرستان کی اراضی مختص کرنے کا بھی فیصلہ کیا

Web Desk

خیبرپختونخوا، اسپتالوں میں خواجہ سراؤں کا وارڈ مختص کرنے کا فیصلہ

وزیراعلیٰ نے علیحدہ قبرستان کی اراضی مختص کرنے کا بھی فیصلہ کیا

گورنر ہاؤس میں خواجہ سراؤں کو راشن پیکج بھی دیا گیا
گورنر ہاؤس میں خواجہ سراؤں کو راشن پیکج بھی دیا گیا

وزیراعلی خیبرپختونخوا علی امین گنڈا پور  نے صوبے کے تمام ضلعی ہیڈ کوارٹرز اسپتالوں میں خواجہ سراؤں کے لیے علیحدہ کمرہ مختص کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

اس ضمن میں وزیر اعلٰی کی جانب سے محکمہ صحت کو ہدایات جاری کر دی گئی ہیں اور باقاعدہ اعلامیہ بھی جلد جاری کر دیا جائے گا۔

گورنر ہاؤس سے جاری بیان کے مطابق یہ فیصلہ گورنر خیبرپختونخوا حاجی غلام علی اور وزیراعلٰی خیبرپختونخوا علی امین خان گنڈاپور کی گورنر ہاؤس میں اہم ملاقات کے دوران کیا گیا۔

ملاقات میں صوبےکے خواجہ سراؤں کو تدفین اور علاج معالجہ کے حوالے سے مشکلات پر تبادلہ خیال کیا گیا۔

اسپتالوں میں سہولت کے علاوہ وزیر اعلٰی نے انتقال کر جانے والے خواجہ سراؤں کی تدفین کےلیے علیحدہ قبرستان کی اراضی مختص کرنے کا بھی فیصلہ کیا۔

اس حوالے سے بھی باقاعدہ اعلامیہ جلد جاری کر دیا جائے گا۔

دوسری جانب گورنر ہاؤس میں300 خواجہ سراؤں میں رمضان پیکیج تقسیم کی تقریب منعقد کی گئی اس موقع پرمیئر پشاور زبیر علی نے خواجہ سراؤں کے مسائل بیان کیے.

گورنر ہاؤس کی 76 سالہ تاریخ میں پہلی مرتبہ خواجہ سراؤں کے لیے گورنر ہاؤس کے دروازے کھولے گئے اور مالی امداد اور رمضان پیکج دیا گیا۔

حاجی غلام علی نے کہا کہ خواجہ سرا بھی پاکستانی شہری ہیں اور معاشرے کا مظلوم طبقہ ہیں ان کا مقدمہ وفاقی و صوبائی حکومت تک پہنچاؤں گا۔

تازہ ترین