دلچسپ و خاص

تاجر نے روحانی پیشوا بننے کیلئے 200 کروڑ عطیہ کردیے

کاروباری شخص اپنی 19 سالہ بیٹی اور 16 سالہ بیٹے کے نقش قدم پر چل رہا ہے۔

Web Desk

تاجر نے روحانی پیشوا بننے کیلئے 200 کروڑ عطیہ کردیے

کاروباری شخص اپنی 19 سالہ بیٹی اور 16 سالہ بیٹے کے نقش قدم پر چل رہا ہے۔

بھاویش بھنڈاری اور ان کی اہلیہ نے فروری میں اپنی تمام دولت عطیہ کر دی۔
بھاویش بھنڈاری اور ان کی اہلیہ نے فروری میں اپنی تمام دولت عطیہ کر دی۔

انڈیا کے شہر گجرات سے تعلق رکھنے والے ایک کروڑ پتی جوڑے نے 200 کروڑ روپے عطیہ کرکے درویشی اختیار کرلی۔

مذہبی راہ پر گامزن بھاویش بھنڈاری نامی تاجر اور ان کی اہلیہ نے فروری میں ایک تقریب کے دوران اپنی تمام دولت عطیہ کی تھی اور رواں ماہ باضابطہ طور پر اس سے دستبرداری کا اعلان کریں گے۔

تعمیراتی شعبے میں ہمت نگر سے تعلق رکھنے والا یہ تاجر حقیقت میں اپنی 19 سالہ بیٹی اور 16 سالہ بیٹے کے نقش قدم پر چل رہا ہے جنہوں نے 2022 میں راہبیت اختیار کی تھی۔

ان کی برادری کے مطابق بھاویش اور ان کی اہلیہ ان کے بچوں سے بے حد متاثر تھے جنہوں نے مادہ پرستی کو چھوڑ کر روحانی راستہ اختیار کیا۔ اپنی بے پناہ دولت کے لیے مشہور بھنڈاری خاندان کے اس فیصلے نے ریاست بھر کی توجہ حاصل کرلی ہے۔

بھنڈاری جوڑے نے جلوس کی شکل میں  چار کلومیٹر تک سفر کرکے موبائل فونز ، ایئر کنڈیشنر سمیت اپنا تمام سامان عطیہ کیا۔ جلوس کی ویڈیوز میں جوڑا شاہی لباس میں ملبوس تخت پر دیکھا گیا۔

 
بھنڈاری جوڑے نے چار کلومیٹر تک  سفر کرکے موبائل فونز ،  ایئر کنڈیشنر سمیت اپنا تمام سامان عطیہ کیا۔
بھنڈاری جوڑے نے چار کلومیٹر تک سفر کرکے موبائل فونز ، ایئر کنڈیشنر سمیت اپنا تمام سامان عطیہ کیا۔

واضح رہے کہ  یہ جوڑا ہندوستان کے ایک قدیم مذہب 'جین مت' میں 'دکشا' کا اہم عہد کرنے جارہا ہے جس کے مطابق مادہ پرستی اور آسائشوں کو چھوڑ کر خیرات پر زندگی بسر کی  جاتی ہے اور پورے ملک میں ننگے پاؤں گھوما جاتا ہے۔

ممکنہ طور پر جوڑا یہ عہد 22 اپریل کو لینے جارہا ہے جس کے بعد نا صرف انہیں تمام خاندانی تعلقات منقطع کرنا ہوں گے بلکہ 'مادی اشیاء' بھی ترک کرنا ہوگی۔ پھر وہ پورے ہندوستان میں ننگے پاؤں چلیں گے اور صرف خیرات پر زندگی بسر کریں گے۔

تازہ ترین