عالمی منظر

کینیا کے آرمی چیف ہیلی کاپٹر حادثے میں ہلاک

صدر نے قومی سلامتی کونسل کا ہنگامی اجلاس بلایا

Web Desk

کینیا کے آرمی چیف ہیلی کاپٹر حادثے میں ہلاک

صدر نے قومی سلامتی کونسل کا ہنگامی اجلاس بلایا

حادثہ دارالحکومت نیروبی میں پیش آیا
حادثہ دارالحکومت نیروبی میں پیش آیا

 کینیا کے آرمی چیف اور نو دیگر اعلیٰ افسران فضائی حادثے میں اپنی جان سے ہاتھ دھو بیٹھے۔

کینیا کے صدر ولیم روٹو نے اپنے بیان میں تصدیق کی کہ ’آج دوپہر دو بج کر 20 منٹ  ہماری افواج کیلئے ایک المناک وقت تھا کیونکہ اس وقت ہمارا ایک ہیلی کاپٹر حادثے کا شکار ہوا جس میں آرمی چیف جنرل فرانسس اومونڈی اوگولا سمیت 9 اعلیٰ افسران کی موت ہوگئی۔‘

بتایا جارہا ہے کہ یہ افسوسناک واقعہ کینیا کے دارالحکومت نیروبی کے شمال مغرب میں تقریباً 400 کلومیٹر (250 میل) کے فاصلے پر ایلجیو ماراکویٹ کاؤنٹی میں پیش آیا۔

 حادثے کی خبر سامنے آنے کے بعد صدر نے قومی سلامتی کونسل کا ہنگامی اجلاس بلایا تھا جس کے بعد اعلان کیا گیا کہ ہیلی کاپٹر میں سوار دیگر نو بہادر فوجی اہلکار بھی ہلاک ہوگئے جبکہ دو اہلکار معجزانہ طور پر بچ گئے۔

 آرمی چیف 61 سالہ اوگالا ایک تربیت یافتہ پائلٹ تھے، ایک سال بعد انکی مدت ملازمت اختتام پذیر ہورہی تھی، انہوں نے حال ہی میں فوجی سروس کے 40 سال مکمل کیے۔

کینیا کے صدر نے اپنے بیان میں کہا کہ ’کینیا کی فضائیہ نے حادثے کی وجہ معلوم کرنے کے لیے ایک تحقیقاتی ٹیم روانہ کردی ہے جو جو دارالحکومت نیروبی کے شمال مغرب میں تقریباً 400 کلومیٹر (250 میل) کے فاصلے پر ایلجیو ماراکویٹ کاؤنٹی میں پیش آیا۔

اوگولا کا ہیلی کاپٹر چیسگون گاؤں سے ٹیک آف کرنے کے فوری بعد ہی حادثے کا شکار ہوا۔

اس فضائی حادثے میں ہونے والے قیمتی نقصان پر کینیا میں تین روزہ سوگ کا اعلان کیا گیا جس کے تحت  سرکاری پرچم سرنگوں رہے گا جبکہ دیگر ممالک کے اعلی عہدیداران تعزیتی پیغامات جاری کررہے ہیں۔

تازہ ترین