انفوٹینمنٹ

سلمان خان کی رہائشگاہ پر فائرنگ، ایک اور ملزم گرفتار

ملزم انمول بشنوئی کے لیے کام کرتا ہے، پولیس کا دعویٰ

Web Desk

سلمان خان کی رہائشگاہ پر فائرنگ، ایک اور ملزم گرفتار

ملزم انمول بشنوئی کے لیے کام کرتا ہے، پولیس کا دعویٰ

گرفتار ہونے والے شخص کا تعلق سلمان خان کی رہائش گاہ کے باہر فائرنگ کرنے والے ملزمان سے ہے
گرفتار ہونے والے شخص کا تعلق سلمان خان کی رہائش گاہ کے باہر فائرنگ کرنے والے ملزمان سے ہے

بھارتی اداکار سلمان خان کی رہائش گاہ کے سامنے فائرنگ کرنے والے ملزمان سے مستقل رابطے میں رہنے والے ایک اور شخص کو گرفتار کرلیا گیا۔

14 اپریل کو صبح 5 بجے دو نامعلوم موٹر سائیکل سواروں نے سلمان خان کی رہائش گاہ  'گلیکسی اپارٹمنٹس' کے سامنے ہوائی فائرنگ کی اور پھر وہاں سے فرار ہوگئے۔

علاوہ ازیں شوٹرز نے ایک گولی عمارت کی پہلی منزل پر بھی چلائی جہاں سلمان خان ہوتے ہیں، تاہم گولی دیوار پر جاکر لگی۔ 

اس واقعہ کے بعد ممبئی کرائم برانچ حرکت میں آگئی اور سی سی ٹی وی فوٹیج کی مدد سے ملزمان کی شناخت کرنے کے بعد انہیں بھارتی ریاست گجرات کے علاقے بھوج سے گرفتار کرلیا۔

ملزمان کو 16 اپریل سے 25 اپریل تک پولیس کی تحویل میں رکھنے کا فیصلہ سنایا گیا اور دورانِ تفتیش ملزمان کی جانب سے کئی انکشافات کیے گئے۔

اب ممبئی پولیس نے اس واقعہ سے جڑے ایک اور شخص کا سراغ لگاتے ہوئے اسے بھارتی ریاست ہریانہ سے گرفتار کرلیا ہے۔

ممبئی پولیس کے مطابق ہریانہ سے گرفتار ہونے والے شخص کا تعلق سلمان خان کی رہائش گاہ کے باہر فائرنگ کرنے والے ملزمان سے ہے۔

پولیس نے انکشاف کیا کہ فائرنگ سے قبل اور اس کے بعد بھی یہ شخص دونوں ملزمان سے مستقل رابطے میں رہا اور شبہ ہے کہ یہ شخص لارنس بشنوئی کے بھائی انمول بشنوئی کی ہدایت پر کام کررہا تھا'۔

اس سے قبل ممبئی کرائم برانچ نے یہ انکشاف کیا تھا کہ' شوٹرز کا مقصد سلمان خان کو قتل کرنا نہیں بلکہ صرف ان کو خوفزدہ کرنا تھا'۔

بھارتی میڈیا رپورٹس کے مطابق شوٹرز سے اس کام کے 4 لاکھ بھارتی روپے دینے کا وعدہ کیا گیا تھا جس کی پہلی پیمنٹ 1 لاکھ بھارتی روپے طے تھی۔

یاد رہے کہ فائرنگ کے واقعہ کے بعد بشنوئی گینگ کی جانب سے فائرنگ کی ذمہ داری لارنس بشنوئی کے بھائی انمول بشنوئی نے مائیکرو بلاگنگ پلیٹ فارم فیس بُک پر ایک پوسٹ کے ذریعے خود قبول کرلی تھی۔

تازہ ترین