ٹیکنالوجی

نان فائلرز پاکستانیوں پر اضافی ٹیکس لگانے پر غور

نان فائلرز کی سم پر 2 عشاریہ 5 فیصد اضافی ٹیکس لگانے پر بھی غور کیا جارہا ہے۔

Web Desk

نان فائلرز پاکستانیوں پر اضافی ٹیکس لگانے پر غور

نان فائلرز کی سم پر 2 عشاریہ 5 فیصد اضافی ٹیکس لگانے پر بھی غور کیا جارہا ہے۔

نان فائلرز پر اضافی ود ہولڈنگ ٹیکس، فوٹو بشکریہ گوگل
نان فائلرز پر اضافی ود ہولڈنگ ٹیکس، فوٹو بشکریہ گوگل

فیڈرل بورڈ آف ریونیو (ایف بی آر) کو ملک میں نان فائلرز پر اضافی ودہولڈنگ ٹیکس کے ساتھ قانونی کارروائی کا گرین سگنل مل گیا۔

حکومت نے ایف بی آر کو نان فائلرز کے خلاف پلان بی پر عملدرآمد کے لیے گرین سگنل دے دیا، جس کے تحت نان فائلرز پر اضافی ود ہولڈنگ ٹیکس عائد کرنے کے ساتھ ساتھ سمز بلاک کرنے کے آرڈر پر عمل درآمد نہ کرنے والی کمپنیوں کے خلاف قانونی کارروائی کی جائے گی۔

ایف بی آر ذرائع کے مطابق نان فائلرز کے خلاف 15 مئی کے بعد ایکشن لیا جائے گا، جس کے تحت اگر نان فائلرز کی سم بند نہ ہوئی تو اضافی ودہولڈنگ ٹیکس لانے اور نان فائلرز کی سم پر 2 عشاریہ 5 فیصد اضافی ٹیکس لگانے پر بھی غور کیا جارہا ہے۔

ذرائع نے مزید بتایا ہے کہ نان فائلرز کے ہر مرتبہ لوڈ کرانے پر اضافی ٹیکس، موبائل اور ڈیٹا لوڈ پر بھی اضافی ٹیکس لانے پر غور کیا جارہا ہے۔ نان فائلرز کی سمز بند کروانے کا ڈیٹا پی ٹی اے کے سپرد کردیا گیا ہے اور 15 مئی تک نان فائلرز کی سمزبند نہ کی گئیں تو ایف بی آر کمپنیوں کے خلاف کارروائی پرغور کرے گا۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ 10 دن سے زائد گزرنے کے باوجود ٹیلی کام کمپنیوں نے سمز بند کرنے کے احکامات پر عمل درآمد نہیں کیا، جس حوالے سے قانونی ٹیم سے مشاورت کی جائے گی اور ٹیلی کام کمپنیوں کے خلاف عدالت میں درخواست دائرکی جائے گی۔

واضح رہے کہ پاکستان ٹیلی کمیونیکیشن اتھارٹی(پی ٹی اے) نے نان ٹیکس فائلرز کے حوالے سے فیڈرل بورڈ آف ریونیو کی جانب سے اٹھائے گئے اقدام کی مخالفت کرتے ہوئے 5لاکھ سے زائد سمز بند کرنے کی معذرت کر لی۔

پی ٹی اے نے سم بلاک کرنے کے حوالے سے فیڈرل بورڈ آف ریونیو(ایف بی آر) کو جواب دیا کہ قانونی طور پر پی ٹی اے سمز بلاک کرنے کا پابند نہیں ہے۔

پی ٹی اے نے ایف بی آر کو لکھے گئے جوابی خط میں واضح کیا کہ نان فائلرز کی سمز بلاک کرنے کا عمل ہمارے نظام سے مطابقت نہیں رکھتا کیونکہ بڑی تعداد میں خواتین اور بچے مرد حضرات کے نام پر سمز استعمال کرتے ہیں۔

تازہ ترین